ایک راہب اپنے عبادت خانہ میں عبادت کیا کرتا تھا ۔ اس نے ایک مرتبہ اس سے جھانک کر دیکھا تو اس کو ایک عورت نظر آئی اور اس کے عشق میں مبتلا ہو گیا اور اپنا ایک پاؤں اپنے عبادت خانہ سے نکالا تھا کہ اس کے  پاس جائے ۔ لیکن جب ہی اس نے اپنا پاؤں نکالا اس پر عصمت غالب آگئی اور سعادت نے ہاتھوں میں لے لیا تو راہب نے کہا اے  نفس یہ پاؤں عبادت خانہ سے اس لئے نکلا ہے کہ وہ اللہ کی نافرمانی کرے اور عورت کے پاس جائے پھر وہ میرے ساتھ میرے عبادت خانہ میں رہے اللہ کی قسم یہ کبھی نہیں ہوگا ۔ پھر اس نے اس پاؤں کو عبادت خانہ میں بھی رہے اللہ کی قسم یہ کبھی نہیں ہوگا ۔ پھر اس نے اس پاؤں کو عبادت خانہ سے باہر ہی رکھا جس پر برف باری بھی ہوتی تھی اور بارشیں بھی ، دھوپ بھی لگتی تھی اور ہوائیں بھی حتٰی کہ وہ پاؤں ٹوٹ گیا اور جسم سے جھڑ کر گر گیا ۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *